SON DAKİKA

Naya Pakistan Global

سندھ حکومت گنےاورگندم کےمعاملات پر اپنی پوزیشن واضح کرے،فواد چوہدری

سندھ حکومت گنےاورگندم کےمعاملات پر اپنی پوزیشن واضح کرے،فواد چوہدری
05 November 2021 - 12:51

وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نے سندھ حکومت پر پہلے گندم ریلیز نہ کرنے اور اب گنے کی کرشنگ میں تاخیر کرنے پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت واضح کرے کہ وہ آخر چاہتی کیا ہے اور کس ایجنڈے پر عمل پیرا ہے۔

اسلام آباد میں وفاقی وزیر فوڈ سیکیورٹی فخر امام کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ سندھ میں آٹے کی بوری پنجاب سے 380 روپے مہنگی ہے جبکہ چینی کی قیمت بھی سب سے زیادہ سندھ میں ہی ہے۔

فوادچوہدری کا کہنا تھا کہ کراچی میں پورے ملک کے مقابلے میں اشیائے خور و نوش سب سے زیادہ مہنگی ہیں اور شہری جس تکلیف سے گزررہے ہیں اس کی وجہ سندھ حکومت کی نااہلی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں کسی کو شکار کے بہانے قتل کیا جارہا ہے تو کہیں سیکیورٹی گارڈز کی موجودگی میں خواتین قتل ہورہی ہیں، صوبے میں قانون کی نام ونشان نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ سٹے کی وجہ سے چینی کی قیمتوں میں اضافہ ہورہا ہے حکومت کے پاس چینی کا 22 دن کا اسٹاک موجود ہے سندھ میں سب سے پہلی کرشنگ سیزن کا آغاز ہوتا ہے جو ابھی تک شروع نہیں ہوسکا۔

فوادچوہدری کا کہنا تھا کہ ملک بھر میں روزنہ 15 ہزار ٹن چینی کا استعمال ہورہا جس میں سے 6 ہزار ٹن گھریلو صارفین استعمال کرتے ہیں جبکہ 9 ٹن مختلف مصنوعات میں استعمال کے لیے صنعتوں کو فراہم کی جاتی ہے۔

وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ عوام کو 3 اشیاء پر سبسڈی دی جائے گی، تیل پرٹیکسز کم کردیے گئے ہیں ورنہ تیل پرسیلزٹیکس قائم رکھتے تو پٹرول 180 روپے فی لیٹر ہوتا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ مڈل کلاس طبقے کے لیے صحت کارڈ لائے ہیں اور سندھ سے کہا ہے کہ وہ بھی ہیلتھ کارڈ پروگرام شروع کرے۔

انہوں نے کہا کہ اس سال 10ارب ڈالر کا قرضہ واپس کرچکے ہیں، اگلے سال12ارب ڈالرقرض واپس کرنا ہے۔

وفاقی وزیر فخرامام کا کہنا تھا کہ 20نومبر کو سينٹرل پنجاب ميں کرشنگ شروع ہوگی، کاٹن کی کم پيداوارکا 100 سال کاريکارڈ ٹوٹ گیا جبکہ ملک میں اس دفعہ آلو اور پیاز کی ریکارڈ پیداوار ہوئی۔